Hur Ali News

وزارت خزانہ نے عالمی بینک کے معاشی ترقی کے تخمینے کو غلط قراردے دیا

وزارت خزانہ نے کہا ہے کہ ورلڈ بینک کا پاکستان کی معاشی ترقی سے متعلق تخمینہ غیرحقیقی ہے، رواں مالی سال پاکستان کی معیشت 5 فیصد شرح سے ترقی کرے گی، جبکہ عالمی بینک کا معاشی شرح نمو3.4 فیصد رہنے کا تخمینہ غلط ہے۔ تفصیلات کے مطابق وزارت خزانہ نے پاکستان کی معاشی ترقی سے متعلق عالمی بینک کی رپورٹ پر وضاحت جاری کی ہے جس میں عالمی بینک کے پاکستان کی ترقی سے متعلق معاشی تخمینے کو غلط قرار دیا گیا ہے، وزارت خزانہ کا کہنا ہے کہ ورلڈ بینک کے تحت مالی سال2021 میں معاشی ترقی کی شرح 3.94 فیصد رہی، جبکہ عالمی بینک کا موجودہ مالی سال معاشی شرح نمو3.4 فیصد رہنے کا تخمینہ درست نہیں، رواں مالی سال پاکستان کی معاشی ترقی کی رفتار 5 فیصد شرح رہے گی، گنے، چاول، مکئی، کپاس کی فصل میں بہتری کا تخمینہ ہے،گندم کی پیداوار 2 کروڑ 75 لاکھ ٹن رہی جبکہ مکئی کی پیداوار 89 لاکھ ٹن رہی۔
جولائی میں لارج سکیل مینوفیکچرنگ میں 2.3 فیصد بہتری آئی۔وزارت خزانہ نے مزید بتایا کہ زرعی شعبے میں شرح نمو 2.8 فیصد، صنعتی شرح نمو 3.6 فیصد، خدمات میں شرح نمو 4.4 فیصد ہے۔ واضح رہے گزشتہ روز عالمی بینک نے پاکستانی معیشت پر جاری رپورٹ میں کہ پاکستان کو رواں مالی سال مالیاتی مسائل کا سامنا رہے گا ، پاکستان کو بیرونی دبا ئواور مالی چیلنج کم کرنے پر توجہ دینی ہوگی۔
عالمی بینک کا مزید کہنا ہے کہ رواں مالی سالی معاشی نمو 3.4 فیصد رہنے کا امکان ہے، پاکستان کی معاشی نمو مالی سال 2023ء میں4 فیصد تک پہنچ جائے گی ۔ارپورٹ میں کہا گیا ہے کہ حکومت پاکستان معاشی استحکام کو برقرار رکھنے پرتوجہ دے ، شعبہ توانائی کامالی استحکام بہتر بنانے کی ضرورت ہے۔رپورٹ میں رواں مالی سال مہنگائی بڑھنے کی بھی پیشگوئی کرتے ہوئے کہا ہے کہ کرنٹ اکاونٹ خسارہ مالی سال 23 میں جی ڈی پی کے 2.5 فیصد تک متوقع ہے۔ رواں مالی سال برآمدات میں بھی زبردست اضافہ ہوگا اور پاکستان کا مالی خسارہ جی ڈی پی کے 7 فیصد تک رہنے کی توقع ہے ۔ رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ درمیانی مدت میں قرض لینے کا سلسلہ بلند رہے گا اور آئی ایم ایف پروگرام آن ٹریک پر چلتا رہے گا۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *